12th Class Translation Paragraphs Unsolved PTB

Translation Paragraphs (Exercise)

صبح کے سیر ہماری صحت دولت اور خوشی کے لیے بہترین دوا ہے۔یہ ہمیں تندرست رہنے اور تندرست رکھنے میں مدد دیتی ہے۔یہ ہمیں جوان رکھتی ہے اور ہماری دماغی چوکسی کو بڑھاتی ہے۔جو لوگ صبح کی سیر کرتے ہیں وہ ان لوگوں کے مقابلے زیادہ متحرک ہوتے ہیں جو صبح کی سیر نہیں کرتے۔ان میں ارتقاض کی اچھی طاقت ہوتی ہے جو ان کی روز مرہ کی سرگرمیوں جیسے مطالعہ کام وغیرہ میں مدد کرتی ہے وہ کم تناؤ بھی محسوس کرتے ہیں کیونکہ وہ صبح کے سیر کے دوران ارام سے رہتے ہیں

1. A morning walk is the best medicine for our health, wealth and happiness. It helps us stay fit and healthy. It keeps us young and increases our mental agility. Those poeple who take morning walk are more active than those who do not take morning walk. They have good stamina which helps them in their daily activities like study, work etc. They also feel less stressed as they are relaxed during morning walk.

لوڈ شیڈنگ ہمارے ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے ۔یہ امیر اور غریب دونوں کو متاثر کرتی ہے لیکن یہ زیادہ غریبوں پر اثر انداز ہوتی ہے ‘۔ لوڈ شیڈنگ سے صنعتوں، کاروبار اور تجارت کو معاشی نقصان ہوتا ہے جو بجلی کی فرامی نہ ہونے کی وجہ سے صحیح طریقے سے کام نہیں کر پاتے ۔اس کا ہمارے تعلیمی نظام پر بھی اثر پڑتا ہے کیونکہ لوڈ شیڈنگ کے اوقات میں طلبہ پڑھ نہیں سکتے اور اساتذہ کے پاس سکولوں یا کالجوں میں بجلی کی فرامی نہ ہونے کی وجہ سے لیکچرز یا ٹیسٹ کے لیے دقت ہوتی ہے ۔

2. Load shedding is a major hindrance to the development of our country. It affects both the rich and the poor but it affects the poor more. Load shedding causes economic loss to industries, businesses and trades which cannot function properly due to lack of power supply. It also affects our education system as students cannot study during load shedding hours. And teachers have difficulty for lectures or tests due to non-availability of electricity in schools or colleges.

سوشل میڈیا کے اپنے مسائل ہیں ۔ان لوگوں کے لیے جو ساری زندگی کی سوشل میڈیا پر رہے ہیں ان کے لیے ان لائن چیزوں کو بہت سنجیدگی سے لینا اس حقیقت کے باوجود اسان ہے کہ یہ ہمیشہ (یا زیادہ تر وقت ) حقیقت کی اس کی عکاسی نہیں کرتا ہے ۔لوگ اپنے “کامل دن” کے بارے میں پوسٹ کر سکتے ہیں جو میرے لیے اکثر نہیں ہوتا لیکن شاید ہر چند مہینوں میں صرف ایک
بار ہوتا ہے ۔جس کا مطلب ہے کہ اپ کے پاس ہمیشہ بات کرنے کے لیے کچھ نہ کچھ ہوگا کوئی نہیں جانتا جب تک کہ کسی اور نے ہمیں پہلے ہی نہ بتایا ہو ۔

3. Social media has its problems. It’s easy for people who have been on social media all their lives to take things online too seriously, despite the fact that it’s always (or most of the time) the truth doesn’t reflect. People can post about their “perfect day” which doesn’t happen often for me but it may be happens only once every few months which means you’ll always have something to talk about. No one knows unless someone else has already told us.

ٹیلی ویژن جدید لوگوں کے لیے سائنس کا ایک عظیم تحفہ ہے ۔اسے تفریح اور تعلیم کے لیے ایک ذریعہ کے طور پر استعمال کیا جاسکتا ہے۔ہم ٹیلی ویژن کی مدد سے ہر قسم کے پروگرام تفریح ، ڈرامے وغیرہ حاصل کر سکتے ہیں ۔یہ انسانوں کی طرف اپنی زندگی کے معیار کو بہتربنانے کے لیے کی گئی سب سے حیرت انگیز ایجادات میں ایک ہیں تاکہ وہ جسمانی طور پر موجود نہ ہو اور جدید ترین ٹیکنالوجی کے ساتھ کسی بھی جگہ یا وقت ان تک رسائی حاصل کر سکیں۔اور متعلقہ معلومات فراہم کر سکیں

4. Television is a great gift of science to modern people. It can be used as a medium for entertainment and education. With the help of television we can get all kinds of programs entertainment, drama etc. It is one of the most amazing inventions made by people to improve their quality of life so that they are not physically present and can access them at any place and time with the latest technology and can provide relevant information.

کشمیر کا تنازعہ پاکستان اور بھارت کے درمیان درینہ تنازعہ ہے ۔یہ تنازعہ 1947 میں برٹش انڈیا کے دو ازاد ممالک میں تقسیم ہونے کے بعد پیدا ہوا ،جب سابق صوبہ پنجاب کے ایک حصے سے نئی ریاست جموں کشمیر بنائی گئی ۔ہندوستان نے دعوی کیا کہ اسے کبھی بہی برطانوی ہندوستانی حکمرانی سے پاکستان قانونی طور پر منتقل نہیں کیا گیا تھا ,اور تب سے اس نے اس پوزیشن کو برقرار رکھا ہوا ہے ۔اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے اور کشمیر کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے بن القوامی فورمز بنائے گئے تھے لیکن یہ تمام کوششیں ناکام ہوئیں کیونکہ اس میں دونوں فریقوں کے مختلف مفادات ہیں اور ابھی تک کوئی حل نہیں نکلا ہے

5. The Kashmir dispute is a long-standing dispute between Pakistan and India. This dispute arose after the partition of British India into two independent countries in 1947, when the new state of Jammu and Kashmir was created from a part of the former Punjab province. India claimed that It was never legally transferred from British Indian rule to Pakistan, and has maintained that position ever since. International Forums were created to resolve this issue and to resolve the Kashmir issue. But all these efforts have failed because both sides have different interests and no solution has been found yet.

یہ میرا گاؤں ہے یہ ایک۔ خوبصورت گاؤں ہے۔ گاؤں کے ارد گرد ہرے بھرے کھیت ہیں۔اج کل گرمیوں کا موسم ہے سورج چمک رہا ہے اور گندم کے کھیتوں میں بھی بہت سے لوگ جمع ہیں ۔وہ گندم کی پکی ہوئی فصل کاٹ رہے ہیں۔ وہ بہت محنت سے کام کر رہے ہیں ۔تپتے ہوئے سورج کے نیچے کام کرنا اسان نہیں۔لیکن وہ بہت خوش ہیں یہ فصل انہوں نے کئی مہینوں کی محنت کے بعد حاصل کی ہے ۔اب وہ فصل کاٹ رہے ہیں کل وہ بہو سے دانے الگ کر کریں گے۔ دانے وہ خود کھائیں گے اور بھوسا اپنے جانوروں کو کھلائیں گے۔ گاؤں کہ لوگ سادہ اور محنتی ہوتے ہیں

6. This is my village. It is a beautiful village. There are green fields around the village. Today is summer season, the sun is shining and many people are also gathered in the wheat fields. They are harvesting the ripe wheat crop. They are working very hard. It is not easy to work under the hot sun. But they are very happy. They have got this crop after many months of hard work. Now they are reaping the crop. Tomorrow, they separate the grains from the straw. The grains they will eat themselves and the straw they will feed their animals. The people of the village are simple and hard working.

یہ ایک ایسی کہانی ہے جو انسان میں پائی جانے والی ارادے کی کمزوری اور غیر مستقل مزاجی کی عکاسی کرتی ہے ۔افسانہ نگار نے علامتی طور پر ایک شخص کا سفر بیان کیا ہے جو غلط بس میں سوار ہو جاتا ہے۔ دوران سفر اس کے ذہن میں مختلف خیالات کا جوابھاٹا اٹھتا رہتا ہےاور وہ کسی ایک خیال کو بھی عملی جامہ نہیں پہنا پاتا ۔ اسے یہ احساس کچھ دیر کے بعد ہو جاتا ہے کہ وہ غلط بس میں سوار ہے لیکن بس کی رفتار اور رش کی وجہ سے وہ کوئی قدم نہیں اٹھا پاتا ۔

7. It is a story that reflects the weakness and impermanence of human will. The author symbolically describes the journey of a person who gets on the wrong bus. During the journey, the tide of different ideas keeps rising in his mind and he is not able to implement even a single idea. He realizes after some time that he is on the wrong bus, but due to the speed and rush of the bus, he is unable to take a step.

پاکستان بنیادی طور پر ایک زرعی ملک ہے اور لوگوں کی ایک بھاری اکثریت دیہات میں رہتی ہے ۔کسانوں کو دن رات محنت کرنا پڑتی ہے ۔لیکن ان کی بہتری اور خوشحالی پر بہت کم توجہ دی جاتی ہے ۔دیہات میں بنیادی سہولتوں کا فقدان ہوتا ہے ۔شاید اسی لیے لوگوں کی بڑی تعداد شہروں کا رخ کرتی ہے

8. Pakistan is basically an agricultural country and a huge majority of people live in villages. Farmers have to work day and night. But little attention is given to their improvement and prosperity. In villages, there is a lack of  basic facilities. Perhaps that is why a large number of people move to cities.

اس وقت پاکستان بہت سے ملکی اور بین الاقوامی مسائل میں گھرا ہوا ہے ۔ہمارے دشمن دن رات ہمیں نقصان پہنچانے کے چکر میں ہیں ۔ہم سب بخوبی اس سے اگاہ ہیں ۔ملت اسلامیہ کا دشمن بہت شاطر اور چالاک ہے ۔ان تمام مشکلات سے نکلنے کے لیے ہمیں ایک مخلص اور دیانت دار رہبر کی ضرورت ہے جو ہمیں تباہی اور اذیت کے گرداب سے نکال سکے ۔ہمیں اپنے شاندار ماضی سے سبق سیکھنے کی ضرورت ہے ۔اللہ سبحانہ و تعالی ہمارے ملک کو ہر افت اور ازمائشوں سے بچائے رکھے امین

9. At present, Pakistan is surrounded by many domestic and international problems. Our enemies are trying to harm us day and night. We are all well aware of this. The enemy of the Nation of Islam is very shrewd and clever. We need a sincere and honest leader who can take us out of the vortex of destruction and torture. We need to learn lessons from our glorious past. May Allah subhanahu wa ta’ala save our country from all calamities and trials.  Ameen.

موبائل فون موجودہ دور کی ایجاد ہے ۔اس کے بے شمار فائدے ہیں ۔یہ رابطے کا سب سے موثر اور سستا ذریعہ ہے ۔لیکن اس کے نقصانات بھی ہیں ۔ہمیں اس کے غلط استعمال کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیے ۔موبائل فون پر دوسروں کو تنگ کرنا بہت ناپسندیدہ بات ہے ۔ہم سب کو اس کے غلط استعمال کو ترک کر دینا چاہیے ۔جو لوگ دوسروں کو تنگ کرتے ہیں وہ خود بھی خوش نہیں رہ سکتے

10. Mobile phone is a modern invention. It has many advantages. It is the most effective and cheap means of communication. But it also has disadvantages. We should discourage its misuse. It is a very undesirable thing to harass others on mobile phone. We all should stop abusing it. People who harass others cannot be happy themselves.

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top